Archive for February 13, 2005

Sunday — 03 Muharram 1426 — 24 Magha 1926 — 13 …

Sunday — 03 Muharram 1426 — 24 Magha 1926 — 13 February 2005

Tonight I will tell you a story. It is a story that has played itself out many times in my life. It always starts in the same way. It runs along the same paths. It comes to the same conclusions. So let me tell you what I am talking about. This is a post where I am opening up somewhat and that is because I am in an extremely dark mood nowadays.

I come in contact with someone I like. This does not happen to me often. Most of the people that I meet I do not pursue. I let nature decide how it will turn things out for us. If they become my friends good. If not, ok, was not meant to be. I move on. But there is a very small number of people who I want to get to know better, I want to pursue them and I do not want nature to take control. I want to make sure that things go somewhere. These are those people who I want to be a part of my life.

This is where I start to fuck things up. There is a certain limit of time and company that you can spend with someone who you do not know all that well. I always overdo it. I always overthink. I always overthink. If I dont do this they will consider my rude. If I dont do this that will happen. And once I start to overthink I start to fuck things up. I usually end up forcing my company upon others. I end up forcing people who I have met online into meeting me. I end up forcing people into having dinners together. I end up forcing them to bear with me when I hang out with them.

I know, you know, we all know where I go wrong. But I cannot change myself. I hate that. This lack of control on myself even when I desire to change.

The end is always the same. People who I have hounded start to avoid me. They stop calling me or contacting me. It has happened to me with each and every guy who I have wanted to spend more time with that I should have. Each and every guy. And the end is always the same. I am sitting in my room listening to sad, slow, melancholy songs thinking about what is wrong with me and why does this happen to me each and every time.

Unfortunately something like this happened to me just now. And that is what has sent me into a spiral of depression. I am sorry to have burdened all of you with this but the only place where I can actually place all of my psychosis is on my blog or my shrink and since I dont have a shrink. It is my blog that sees all this.

Oh and yes, the songs that I have been posting all day long are the ones that I listen to when I feel like this. Strangely there is no relation between my condition and the lyrics. Somehow the feeling that I get from the music is exactly what I feel. So, in effect, things are very fucked up. And I have no idea what to do. Yet again.

Maybe the worst thing about this situation is that I can not blame anyone else for it. I am myself to blame for making the mistakes that I make. I can not shift blame. That is so hard.

Oh.. my love.. my darling I’ve hungered for your …

Oh.. my love.. my darling
I’ve hungered for your touch a long.. lonely time
Time goes by so slowly
And time can do so much
Are you still mine?
I need your love
I need your love
God speed your love to me

Lonely rivers flow to the sea.. to the sea
To the open arms of the sea
Lonely rivers sigh
Wait for me
Wait for me
I’ll be coming home
Wait for me

Are you still mine?
I need your love
I need your love
God speed your love to me..

گھر واپس جب آئو گے تم گھر واپس جب آئو گے تم کون ت…

گھر واپس جب آئو گے تم
گھر واپس جب آئو گے تم
کون تمھیں پھچانے گا
کون کہے گا کون کہے گا
کون کہے گا تم بن ساجن
یہ نگری سنسان
بن دستک دروازہ گمسم
بن آہٹ دہلیز
سونے چاند کو تکتے تکتے
راہیں پڑ گئیں ماند
کون کہے گا کون کہے گا
کون کہے گا تم بن ساجن
یہ نگری سنسان
کون کہے گا تم بن ساجن
کیسے کٹے دن رات
ساون کےجو رنگ گھلے
اور ڈوب گئی برسات
کون کہے گا کون کہے گا
کون کہے گا تم بن ساجن
یہ نگری سنسان
پل جیسے پتھر بن جائیں
گھڑياں جیسے ناگ
دن نکلے تو شام نہ آئے
آئے تو بہران
کون کہے گا کون کہے گا
کون کہے گا تم بن ساجن
یہ نگری سنسان
گھر واپس جب آئو گے تم
گھر واپس جب آئو گے تم
کیا دیکھو کیا پائو گے
کیا دیکھو کیا پائو گے
یار نگار وہ سنگی ساتھی
یار نگار وہ سنگی ساتھی
مدھ بھریاں تھی اکھیاں جن کی
مدھ بھریاں تھی اکھیاں جن کی
باتیں پھلجھڑیاں
بجھ گئے سارے لوگ وہ پیارے
رہ گئیں کچھ لڑیاں
تم بن ساجن تم بن ساجن
تم بن ساجن تم بن ساجن
یہ نگری سنسان
پھول ببول بگولے دیکھو
پھول ببول بگولے دیکھو
ایک گریزاں موج کی خاطر
ایک گریزاں موج کی خاطر
صحرا صحرا پھرتے ہیں
صحرا صحرا پھرتے ہیں
تم بھی پھرو درویش صفت اب
تم بھی پھرو درویش صفت اب
رقصاں رقصاں حیراں حیراں
رقصاں رقصاں حیراں حیراں
لوٹ کہ اب کیا آئو گے
اور کیا پائو گے
کیا پائو گے
کیا پائو گے
کون کہے گا کون کہے گا
کون کہے گا تم بن ساجن
یہ نگری سنسان
یہ نگری سنسان
یہ نگری سنسان

الفت کی نئی منزل کو چلا تو باہیں ڈال کہ باہوں میں …

الفت کی نئی منزل کو چلا تو باہیں ڈال کہ باہوں میں
دل توڑنے والے دیکھ کہ چل ہم بھی تو پڑے ہیں راہوں میں
الفت کی نئی منزل کو چلا

کیا کیا نہ جفائیں دل پہ سہیں پر تم سے کوئی شکوا نہ کیا
پر تم سے کوئی شکوا نہ کیا
اس جرم کو بھی شامل کر لو میرے ماسوم گناہوں میں
دل توڑنے والے دیکھ کہ چل ہم بھی تو پڑے ہیں راہوں میں
ہم بھی تو پڑے ہیں راہوں میں
الفت کی نئی منزل کو چلا

جب چانرنی راتوں میں تو نے خود ہم سے کیا اقرار وفا
خود ہم سے کیا اقرار وف
پھر آج ہیں کیوں ہم بیگانے تیرے بے رحم نگاہوں میں
دل توڑنے والے دیکھ کہ چل ہم بھی تو پڑے ہیں راہوں میں
ہم بھی تو پڑے ہیں راہوں میں
الفت کی نئی منزل کو چلا

ہم بھی ہیں وہی تم بھی ہو وہی یہ اپنی اپنی قسمت ہے
یہ اپنی اپنی قسمت ہے
تم کھیل رہے ہو خشیوں سے ہم ڈوب گئے ہیں آہوں میں
دل توڑنے والے دیکھ کہ چل ہم بھی تو پڑے ہیں راہوں میں
ہم بھی تو پڑے ہیں راہوں میں
الفت کی نئی منزل کو چلا

اے عشق ہمیں برباد نہ کر برباد نہ کر اے عشق ہمیں ب…

اے عشق ہمیں برباد نہ کر برباد نہ کر
اے عشق ہمیں برباد نہ کر برباد نہ کر
اے عشق ہمیں برباد نہ کر برباد نہ کر
اے عشق نہ چھیڑ آ آ کہ ہمیں
ہم بھولے ہوئوں کو یاد نہ کر
پہلے ہی بہت ناشاد ہیں ہم
تو اور ہمیں ناشاد نہ کر
قسمت کا ستم ہی کم نہیں کچھ
یہ تازہ ستم ایجاد نہ کر
یوں ظلم نہ کر بے داد نہ کر
اے عشق ہمیں برباد نہ کر برباد نہ کر
راتوں کو اٹھ اٹھ کر روتے ہیں
رو رو کہ دعائیں کرتے ہیں
آنکھوں میں تصور دل میں خلش
سر دھنتے ہیں آہیں بھرتے ہیں
اے عشق یہ کیسا روگ لگا
جیتے ہیں نہ ظالم مرتے ہیں
ان خابوں سے یوں آزاد نہ کر
اے عشق ہمیں برباد نہ کر برباد نہ کر
جس دن سے بندھا ہے دھیان تیرا
گھبرائے ہوئے سے رہتے ہیں
ہر وقت تصور کر کر کہ
شرمائے ہوئے سے رہتے ہیں
کمبھلائے ہوئے پھولوں کی طرح
کمبھلائے ہوئے سے رہتے ہیں
پامال نہ کر بے داد نہ کر
اے عشق ہمیں برباد نہ کر برباد نہ کر
اے عشق ہمیں برباد نہ کر برباد نہ کر

آہ کو چاہئے اک عمر اثر ہونے تک آہ کو چاہئے اک عمر …

آہ کو چاہئے اک عمر اثر ہونے تک
آہ کو چاہئے اک عمر اثر ہونے تک
کون جیتا ہے تیری زلف کے سر ہونے تک
کون جیتا ہے تیری زلف کے سر ہونے تک

آہ کو چاہئے اک عمر اثر ہونے تک

عاشقی سبر طلب اور تمنا بے تاب
عاشقی سبر طلب اور تمنا بے تاب
دل کا کیا رنگ کروں خون جگر ہونے تک
دل کا کیا رنگ کروں خون جگر ہونے تک

آہ کو چاہئے اک عمر اثر ہونے تک

ہم نے مانا کہ تغافل نہ کرو گے لیکن
ہم نے مانا کہ تغافل نہ کرو گے لیکن
خاک ہو جائیں گے ہم تم کو خبر ہونے تک
خاک ہو جائیں گے ہم تم کو خبر ہونے تک

آہ کو چاہئے اک عمر اثر ہونے تک

غم حستی کا اسد کس سے ہو جز مرگ علاج
غم حستی کا اسد کس سے ہو جز مرگ علاج
شمع ہر رنگ میں جلتی ہے سحر ہونے تک
شمع ہر رنگ میں جلتی ہے سحر ہونے تک

آہ کو چاہئے اک عمر اثر ہونے تک

I’m just the pieces of the man I used to be Too ma…

I’m just the pieces of the man I used to be
Too many bitter tears are raining down on me
I’m far away from home
And I’ve been facing this alone
For much too long
I feel like no-one ever told the truth to me
About growing up and what a struggle it would be
In my tangled state of mind
I’ve been looking back to find
Where I went wrong

Too much love will kill you
If you can’t make up your mind
Torn between the lover
And the love you leave behind
You’re headed for disaster
‘cos you never read the signs
Too much love will kill you
Every time

I’m just the shadow of the man I used to be
And it seems like there’s no way out of this for me
I used to bring you sunshine
Now all I ever do is bring you down
How would it be if you were standing in my shoes
Can’t you see that it’s impossible to choose
No there’s no making sense of it
Every way I go I have to lose

Too much love will kill you
Just as sure as none at all
It’ll drain the power that’s in you
Make you plead and scream and crawl
And the pain will make you crazy
You’re the victim of your crime
Too much love will kill you
Every time

Too much love will kill you
It’ll make your life a lie
Yes, too much love will kill you
And you won’t understand why
You’d give your life, you’d sell your soul
But here it comes again
Too much love will kill you
In the end
In the end